حضور اکرمؐ کا حلیہ مبارک

” آپ کا قد نہ زیادہ لمبا تھا اور نہ زیادہ پست ،ماتھا کشادہ تھا ، سر بہت خوبصورتی کے ﷺ

ساتھ بڑا تھا ۔بال نیم گھنگریالے تھے جیسے ساکن پانی پر ہلکی ہلکی موجیں حسن پیدا کرتی ہیں ۔بھنویں گول خوبصورت ۔جہاں وہ ملتی تھیں وہاں بال نہ تھے بلکہ ایک رگ تھی جو غصے کے وقت پھڑکتی تھی ۔آپ کی آنکھیں بڑی ،خوب صورت ،سرخ ڈوروں ﷺ

سے مزین ، موٹی اور سیاہ تھیں ،سفیدی انتہائی سفید تھی ۔ پلکیں دراز ،ناک مبارک آگے سے تھوڑا اٹھا ہوا ،نتھنوں سے باریک ، ایک نور کا ہالہ تھا جو ناک پر چھایا رہتا تھا ۔آپ کے ہونٹ انتہائی خوبصورت تراشیدہ چھوٹے دہانے کی چوڑائی کے ساتھ ۔دانت بے حد ﷺ

خوب صورت ،متوازی اور ان میں کسی قسم کی کوئی بے ربطگی نہ تھی ،انتہائی مربوط۔پہلے چار دانتوں میں خلا تھا باریک سا ،جب مسکراتے تھے تو دانتوں سے نور نکلتا اور دیواروں پر پڑتا دکھائی دیتا تھا۔ گال مبارک نہ پچکے ہوئے نہ ابھرے ہوئے۔ چہرہ چودھویں کے چاند کی طرح چمکتا ہوا گول تھا۔ داڑھی مبارک گھنی ،گردن صراحی دار اور لمبی اور آواز میں عجیب کشش اور رعب تھا ۔آپ کا رنگ چمکتا تھا نو خیز کلیوں کی طرح۔نہ آپ ایسے ﷺ

موٹے تھے کہ نظروں میں جچیں نہیں اور نہ ایسے کمزور دبلے کہ بے رعب ہو جائیں ۔”