نقلی مکھن اور مارجرین – مکھن اور مارجرین کی کہانی حقائق کی زبانی

butter vs margarine in urdu

 “نہیں نہیں یہ نہیں ہوسکتا “نپولین چیخ اٹھا ۔۔۔
یہ فرانس کا بادشاہ نپولین سوم تھا ۔
اسے جب فوج کا بجٹ دکھایا گیا تو اس کی حیرت کی انتہاء نہ رہی جب اس نے بجٹ کا ایک بڑا حصہ مکھن کے لیے پایا جو کہ فوجیوں کو ناشتے میں ڈبل روٹی پر لگا کر کھلایا جاتا تھا۔
نپولین سوم کا یہ قول مشہور تھا کہ
اپنی عوام کی ضروریات اچھی طرح پوری کرو اور دوسرے ممالک سے اچھے تعلقات رکھو تمہاری حکومت کوئی نہیں گرا سکتا
فرانس میں مکھن کی پیداوار انتہائی کم تھی ۔اس ضرورت کو پورا کرنے کےلیے اسے یورپ سے مکھن منگوانا پڑتا تھا جو کہ انتہائی مہنگا پڑتا ۔نپولین نے اپنے ملک میں منادی کرادی کے جو کوئی ایسی چیز تیار کرے گا جو دودھ سے تو نہ بنتی ہو لیکن ہو بلکل مکھن کی طرح اسے بھاری انعام دیا جائے گا۔یہ ایسی چیز ہو جسے ڈبل روٹی پر بھی لگایا جاسکے ،اور کیک میں بھی اسے استعمال کیا جاسکتا ہو ۔بھاری انعام کا سنتے ہی تمام کیمیا دان کھوج میں لگ گئے
ھپولیٹ میگ موریث نامی ایک کیمیا دان کی نظر ایک تیل پر جا ٹھہری۔جسے ایک یونانی کیمیادان مچل انجین چیودیول نے 1813ء میں مختلف سبزیوں اور بیجوں کے تیل سے بنایا تھا۔کیمیا دان ھپولیٹ نے اس تیل میں جپلیٹن شامل کرکے خوب بلویا اور پھر آگ پر پکانے کے بعد جعلی مکھن تیار کرنے میں کامیاب ہوگیا۔اس جعلی مکھن کو اس اولیو مرجرین کا نام دیا اور نپولین سے اپنے حصے کا انعام وصول کیا۔
یہ نیا ایجاد کردہ مکھن انتہائی کم قیمت تھا ،لہٰذہ بہت جلد لوگوں میں مشہور ہو گیا۔اس زمانے مین موٹاپا ،کولیسٹرول،اور دل کا دورہ پڑنے جیسی بیماریاں تھی ہی نہیں ۔اسی لیے مارجرین کے اشتہارات میں اس کے کم قیمت ہونے کو نمایا ں کیا جاتا تھا۔
ایجاد کے صرف تین سال بعد ہی یعنی 1872 ء میں یہ مکھن امریکہ جا پہنچا اور پھر اگلے پانچ سال میں یہ ایک بہت بڑے کاروبار کی صورت اختیار کر گیا۔1878ء میں یونی لیور نے بھر پور اندار سے اس کاروبارمیں قدم رکھااور ایک نئی کمپنی قائم کی جس کا نام مارجرین یونی رکھا اور ہالینڈمیں اپنا مارجرین بنانے کا کارخانہ کھول لیا۔مارجرین کے کاروبار سے ڈیری مکھن بنانے والی کمپنیوں کو انتہائی خسارہ اٹھانا پڑا اور  مارجرین کے کاروبار سے ڈیری مکھن بنانے والی کمپنیوں کو انتہائی خسارہ اٹھانا پڑا اور مارجرین کا کیس امریکی عدالتوں میں چلتا رہا۔آخر  میں مک مکا ہوگیا اور یہ کیس اس سودے بازی پر ختم ہوا کہ مارجرین بنانے الی کمپنیاں دودھ کو اپنی پراڈکٹ میں استعمال  کرسکیں گی اور ڈیری کمپنیاں جیلیئن اور مارجین کو پنیر ،دہی اور کریم وغیرۃ میں استعمال کر سکیں گی۔butter vs margarine in urdu

چناچہ جہاں دودھ کو مارجرین میں شامل کر کے نت نئے ذائقے تیار کیے گئے وہیں پنیر ،دھی اور کریم جو کہ اپنی پیدائش کے چند گھنتوں بعد ہی خراب ہونا شروع ہوجاتے ہیں کو مارجرین اور جیلیئن ڈال کر دیر تک استعمال کے قابل بنایا گیا ۔آج دنیا کی سب سے بڑی مارکرین بنانے والی کمپنی یونی لیور ہے ،جو بلیو بینڈ،رامام ، کنڈی ،کروکس اور ڈوریان کے نام اور ذائقوں کے ساتھ مارجرین بیچتی ہے ۔
ہمارے ہاں پاکستان میں سب سے زیادہ یونی لیور کا بلو بینڈ استعمال کیا جاتا ہے ۔
طبی حوالے سے دیکھا جائے تو ایک زمانےمیں ڈنکے کی چوٹ پر اعلان کیا جاتا تھا کہ مکھن موٹاپا لاتا ہے ۔ کولیسٹرول بڑھاتا ہے ،جبکہ جدید تحقیق کے مطابق مارجرین اور مکھن میں کیلوریز کی تعداد برابر ہوتی ہے ۔بھیا ! اگر آپ کے نزدیک مکھن موٹاپا لاتا ہے تو مارجرین بھی لائے گا کیونکہ کیلوریز کی تعداد تو برابر ہے نہ، کیا سمجھے !!!

butter vs margarine in urdu
مارجرین کی خصوصیات مکھن کے علاوہ پلاسٹک سے بھی ملتی جلتی ہیں ۔پلاسٹک اور مارجرین  میں صرف ایک مالیکیو ل کا فرق ہے۔مارجرین کے استعمال سے دیگر بیماریوں کے علاوہ دل کے مرض میں مبتلا ء ہونے کا خدشہ 3 فیصد بڑھ جاتا ہے ۔
یہ ہی وجہ ہے کہ یورپ میں پچھلے ماہ مارجرین بنانے والی کمپنی نے تسلیم کیا کہ لوگ تیزی سے مارجرین کو چھوڑ کر مکھن کی طرف آ رہے ہیں۔
ہمارے پاکستان کے حالات کا اللہ ہی حافظ ہے۔ آپ بیکری پر جائیں اور ان سے مکھن مانگیں تو وہ ہمیں مشہور کمپنیوں کے مارجرین پکڑا دیتے ہیں۔
ہم بیچاروں کو پتا بھی نہیں ہوتا کہ ہم کیا خرید کر لے آئیں ہیں ۔اور شاید بیکری والوں کو بھی نہ پتا ہو ۔

اس سلسلےمیں نام نہاد کمپنیوں کے مارجرین نما مکھن کو بے نقاب کرتی ہوئی میری تحریر مکھن کہانی ضرور پڑھیں ۔