جاپان کا آخری نِنجا – جو دوسرے کمرے میں گرتی ہوئی سوئی کی آواز تک سن سکتا ہے

جنچی کواکمی جاپان کا آخری ننجا ہے ۔

وہ فوکس اور دھیان کےلیے موم بتی کی آگ کو کئی گھنٹے تک گھورتا رہتا  ہے جب تک وہ اس کے اندر نہ پہنچ جائے

وہ دوسرے کمرے میں گرتی ہوئی سوئی کی آواز بھی سن سکتا ہے ۔

جنچی کے مطابق وہ یہ آرٹ کسی اور کو سکھائے بغیر ہی مر جائے گا کیونکہ جدید دور میں نِنجا کی ضرورت باقی نہیں رہی اور اس آرٹ کی اب وہ قدر نہیں کی جاتی جو پہلے ہوتی تھی ۔

جنچی کے متعلق مزید معلومات  جاننے کے لیے کلک کریں۔