عمران خان نے بھائی کو پاگل قرار دے دیا

سیاسی پارٹیوں میں اختلافات تو ہوتے رہتے ہیں ، لیکن اب کی بار خان صاحب کا غصہ آسمان سے چھونے لگا اور انہوں نےایم کیو ایم کے بھائی کے بارے میں کچھ زیادہ ہی کہہ دیا  یا شاید صحیح ہی کہا
تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ الطاف حسین نارمل نہیں ہیں ان کو علاج کی ضرورت ہے کیونکہ انہوں نے ہماری خواتین کیخلاف انتہائی نازیبا الفاظ استعمال کیے ہیں جس پر تحریک انصاف لندن میں الطاف حسین کیخلاف ہتک عزت کا دعویٰ کرے گی ۔پریس کانفرنس سے خطاب میں چیئرمین تحریک انصاف نے الطاف حسین پر شدید تنقید کی کرتے ہوئے کہاکہ حکومت جے آئی ٹی رپورٹ پر عملدرآمد کرتے ہوئے ملزموں کو گرفتار کرکے سانحہ بلدیا ٹاﺅن کے لواحقین کو انصاف فراہم کریں ۔انہوںنے کہاکہ وقت آگیا ہے کہ ایم کیوایم اپنے آپ کو مسلح گروپ سے علیحدہ کرے کیونکہ اس وقت ملک سے دہشت گردی ختم نہیں ہو گی جب تک ایم کیوایم اپنے آپ کو مسلح گروپ سے علیحدہ نہیں کرتی ۔ان کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم الفاط حسین سے اپنے آپ کو علیحدہ کرے۔
عمران خان نے کہاکہ الطاف حسین نے تحریک انصاف کی خواتین کے لیے انتہائی نازیبا الفاظ کا استعمال کیا جس کی مثال آج تک کی تاریخ نہیں ملتی اور اس کے بعد الطاف حسین کو لیڈر کہنا توہین سمجھتاہوں ۔انہوں نے کہاکہ الطاف حسین کی اس حرکت کے بعد تحر یک انصاف لندن میں ان کیخلاف ہتک عزت کا عویٰ کرے گی کیونکہ انہوں نے نازیبا الفاظ کااستعمال کرکے جذبات مجروح کیے ہیں ۔
عمران خان نے کہاکہ جب الطاف حسین تین گھنٹے تک تقریرکرتے رہے تو اس وقت پیمرا کہاں تھا ؟انہوں نے کہاکہ زہرہ شاہ کو پہلے دھمکی دی گئی اور پھرانہیں قتل کر دیا گیا، زہرہ شاہ الطاف حسین کی تقریر کے بعد قتل ہوئیں۔ انہیں پتہ ہے کہ ذہرہ شاہ کو کس نے قتل کیا لیکن کوئی بھی گرفتار نہیں ہوا نہ ہی کسی کیخلاف کارروائی کی گئی۔
انہوں نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ ایم کیوایم اپنے کو الطاف حسین سے علیحدہ کرے کیونکہ الطاف حسین کا دماغی توازن بگڑ چکا ہے اور انہیں علاج کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ کراچی سے بھتہ اکٹھا کرکے لندن جاتاہے اور برطانیہ کی پولیس نے پیسہ پکڑا بھی تھا لیکن حکومت نے کیس بند کروا دیا ۔