سٹیفن ہاکنگ –کائنات کو سمجھنے کی جستجو

سٹیفن ہاکنگ کا بچپن انگلستان کے ایک مقام سینٹ البن میں گزرا۔اس کے والد ایک ڈاکٹر تھے ۔ہاکنگ اپنے والد سے بے حد متاثر تھا۔اس نے ارادہ کیا کہ وہ بڑے ہوکر سائنس دان بنے گا لہٰذا اس نے طبیعات کے میدان کا انتخاب کیا ۔

۱۹۶۲ء میں آکسفرڈ یونیورسٹی سے طبیعات کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد   وہ پی-ایچ-ڈی کے لیے کیمبرج یونیورسٹی چلا گیا۔اپنے طالب علمی کے زمانے میں ہی اسے پتا چلا کے وہ ایک ایسی بیماری کا شکار ہے جس سے پٹھے کمزور اور ضائع ہو جاتےہیں۔ڈاکٹروں نے اسے بتایا کے وہ چند سال ہی زندہ رہ سکے گا۔یہ بات سن کے اسے اندازہ ہوا کے اسکے پاس وقت بہت کم ہے اور ابھی کائنات کے بارے میں بہت کچھ جاننا باقی ہے۔اسی احساس نے اس میں زیادہ سے زیادہ کام کرنے کا جذبہ پیدا کیا۔

اگرچہ وہ صرف اپنی کرسی پر ہی بیٹھ کر گھوم پھر سکتا تھا اور کمپیوٹر کی الیکٹرانک آواز میں ہی بات کرستکا تھا لیکن اس نے ہمت نہ ہاری ۔اس نے کائنات کے سربستہ راز جاننے کے لئے ہمارے علم میں بہت اضافہ کیا ہے۔

hawking 2

اس نے 1965ء میں کیمبرج سے پی-ایچ-ڈی کی ڈگری حاصل کی -1979ء میں اسے کیمبرج یونیورسٹی میں ہی ریاضی کا پروفیسر مقرر ہوا۔یہ وہ ہی آسامی تھی جس پر کبھی نیوٹن فائز تھا۔اس نے اپنی زندگی کا زیادہ تر وقت کاسمولوجی کے مطالعہ میں صرف کیا ۔کاسمولوجی سائنس کی وہ شاخ ہے جو ہمیں کائنات کی تخلیق ،ارتقاء اور اس کی موجودہ ساخت کو سمجھنے میں مدد دیتی ہے۔

اس کی سب سے زیادہ دلچسپی بلیک ہولز میں تھی۔بلیک ہولز خلا ء میں واقع وہ مقامات ہیں جہاں تجاذب کی قوت اتنی زیادہ ہے کہ اس میں گرنے والی کوئی چیز کبھی باہر نہیں نکل سکتی ۔

اس نے یہ بھی پیز گوئی کی کہ بلیک ہولز میں سے کوئی بھی چیز باہر نہیں آسکتی البتہ اس میں سے ہرارت خارج ہو سکتی ہے۔سٹیفن آجکل ورم ہولز پر کام کر ہے ،روم ہولز خلا ء میں ایسے چھوٹے چھوٹے اتار چڑھاؤ یا جھماکے ہیں جن کے ذریعے خلاء میں موجود بے شمار کہکشاؤں کا ایک دوسرے سے تعلق جڑا ہوا ہے۔

hawking 4

  ۱۹۸۸میں سٹیفن ہاکنگ نے اپنی کتاب ”وقت کی مختصر تاریخ“ شائع کی۔اس کتاب میں اس نے بلیک ہولز اور کائنات کے بارے میں اپنے نظریات کو مختصر اور بہتر انداز میں پیش کیا ہے تاکہ عام آدمی بھی انہیں سمجھ سکے ۔یہ کتاب ساری دنیا میں لاکھوں کی تعداد میں فروخت ہو چکی ہے۔

سٹیفن کی عمر اب 72 سال ہے ۔اس پر متعدد فلمیں بھی بن چکی ہیں ، حال ہی میں بننے والی فلم ”ہاکنگ “ دیکھنے کے قابل ہے۔

hawking 3